اسرائیلی باشندوں کا مسجد اقصی پر حملہ

اسرائیلی باشندوں کا مسجد اقصی پر حملہ

صیہونی آباد کاروں نے غاصب سکیورٹی فورسز کی حمایت میں صیہونی پارلیمنٹ کے ایک ممبر کے ساتھ مل کر مسجد اقصیٰ پر حملہ کیا اور اسلام مخالف نعرے لگائے۔

پير, نومبر 23, 2020 03:04

مزید
غاصب صہیونی رژیم کے ہاتھوں مسجد اقصی کی بے حرمتی کی 51 ویں سالگرہ

غاصب صہیونی رژیم کے ہاتھوں مسجد اقصی کی بے حرمتی کی 51 ویں سالگرہ

صہیونی حکام ایک عرصے سے یہ ثابت کرنے کی کوشش میں مصروف ہیں کہ قدس شریف کا حقیقی تشخص یہودی اور اسلام سے اس کا کوئی تعلق نہیں ہے

جمعه, اگست 21, 2020 12:46

مزید
اسلامی حاکم کی خصوصیات

اسلامی حاکم کی خصوصیات

اسلامی ممالک کے ذمہ داروں کو کیسا ہونا چاہیے؟

هفته, جولائی 18, 2020 03:48

مزید
اسلامی حکومت کے عہدہ داروں کو کیسا ہونا چاہیے

اسلامی حکومت کے عہدہ داروں کو کیسا ہونا چاہیے

اسلامی حکمرانوں کو بالکل عام آدمی کی طرح ہونا چاہیے کسی بھی ملک کےحاکم اور عام آدمی میں کوئی فرق نہیں ہونا چاہیے

هفته, جولائی 18, 2020 10:07

مزید
فلسطین کا مسئلہ سیاسی نہیں بلکہ دینی اور عقیدتی ہے

فلسطین کا مسئلہ سیاسی نہیں بلکہ دینی اور عقیدتی ہے

قابل ذکر ہے کہ صیہونی حکام نے ابھی حال ہی میں غرب اردن کو مقبوضہ زمینوں میں ضم کرنے کے منصوبے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس پر جولائی میں کام شروع ہو جائے گا۔ صیہونی حکومت کے منصوبے کی بنیاد پر غرب اردن کا تیس فیصد سے زیادہ علاقہ مقبوضہ زمینوں میں ضم کر دیا جائے گا۔

پير, جولائی 13, 2020 04:34

مزید
یوم قدس اتنا اہم کیوں ؟

یوم قدس اتنا اہم کیوں ؟

یوم قدس باطل کے سامنے حق کی صفیں بچھانے کا ایک نمونہ ہے: جمعۃ الوداع کو یوم قدس کے نام سے جب سے پکارا گیا ہے تو اس دن سے آج تک باطل طاقتوں نے اسے کمزور بنا کر پیش کرنے کی کوشش کی ہے لیکن حقیقت میں یوم قدس بتاتا ہے کہ یہ دن حق و باطل کی صفیں بچھنے اور ظلم کے سامنے عدالت کی صفیں بچھنے کا دن ہے،

جمعرات, مئی 21, 2020 06:35

مزید
صدر اسلام میں حکام اور عوام  کے درمیان تعلقات

صدر اسلام میں حکام اور عوام کے درمیان تعلقات

کسی بھی ملک کےحاکم اور عام آدمی میں کوئی فرق نہیں ہونا چاہیے رسول خدا صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے زمانے میں بھی پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم خود حکومت کے سربراہ تھے اور لوگوں کے ساتھ ان کا برتاو ایسا تھا کہ آپ مسجد اقصی میں عام لوگوں کے ساتھ بیتھ کر اُن کے مسائل سنتے اور حل کرتے تھے اور اگر کوئی اجنبی باہر سے آتا تھا تو اسے وہاں پر موجود لوگوں سے سوال کرنا بڑتا تھا کہ آپ میں سے سر براہ اور حاکم کون ہے امیر المومنین علیہ السلام کے زمانے میں بھی حاکم عدالت میں حاضر ہوا تھا اور جج نے جب علی علیہ السلام کا احترام کرنا چاہا تو آپ نے منع کر دیا اور فرمایا کہ آپ کو میرا احترام کرنے کا حق نہیں ہے ہم دونوں آپ کی عدالت میں ہیں اور ہم میں کوئی فرق نہیں ہے اس کے جج نے علی علیہ السلام کے خلاف اپنا فیصلہ سنایا جس کو علی علیہ السلام نے خندہ پیشانی سے قبول کر لیا۔

جمعرات, اپریل 30, 2020 11:26

مزید
Page 1 From 2 1 | 2